Blog

Malal Hai Magar Itna Malal Thori Hai Parveen Shakir Urdu Sad Poetry

 

Malal Hai Magar Itna Malal Thori Hai Parveen Shakir Urdu Sad Poetry
Malal Hai Magar Itna Malal Thori Hai Parveen Shakir Urdu Sad Poetry




ملال ہے مگر
اتنا ملال تھوڑی ہے

ملال ہے مگر اتنا ملال تھوڑی ہے

یہ آنکھ رونے کی شدت سے لال تھوڑی ہے

بس اپنے واسطے ہی فکر مند ہیں سب لوگ

یہاں کسی کو کسی کا خیال تھوڑی ہے

پروں کو کاٹ دیا ہے، اُڑان سےپہلے

یہ شوق ِ ہجر ہے، شوقِ وصال تھوڑی ہے

مزا تو جب ہے کہ، ہار کے بھی ہنستے رہو

ہمیشہ جیت ہی جانا ، کمال تھوڑی ہے

لگانی پڑتی ہے ڈبکی، اُبھرنے سے پہلے

غروب ہونے کا مطلب زوال تھوڑی ہے

 

پروینؔ شاکر

 

Malal hai magar itna malal thori hai

Yeh ankh roney ki shiddat se laal thori hai

Bs apney wastey hi fikar mand hain sab log

Yahan kissi ko kissi ka khiyal thori hai

Paroon ko kaat diya, uraan se phele

Yeh shouq e hijar hai, shouq e wisaal thori hai

Maza tu jab hai haar k bhi hanstey rho

Hamesha jeet hi jana kamal thori hai

Maza tu jab hai k, haar k bhi hanstey rho

Hamesha jeet hi jana kamal thori hai

Lagani parti hai dubki uberney se phele

Gharoob honey ka matlab zawal thori hai

 

PARVEEN SHAKIR

 

FOR MORE

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker