Blog

Log Hilale Sham Se Bahr Kar Pal Main Mah Tamam Hoy Ibn-E-Insha Urdu Hindi Poetry

 

Log Hilale Sham Se Bahr Kar Pal Main Mah Tamam Hoy 

In Urdu





 لوگ ہلال شام سے بڑھ کر پل میں ماہ تمام ہوئے

ہم ہر برج میں گھٹتے گھٹتے صبح تلک گمنام ہوئے

ان لوگوں کی بات کرو جو عشق میں خوش انجام ہوئے

نجد میں قیس یہاں پر انشاؔ خار ہوئے ناکام ہوئے

کس کا چمکتا چہرا لائیں کس سورج سے مانگیں دھوپ

گھور اندھیرا چھا جاتا ہے خلوت دل میں شام ہوئے

ایک سے ایک جنوں کا مارا اس بستی میں رہتا ہے

ایک ہمیں ہشیار تھے یارو ایک ہمیں بد نام ہوئے

شوق کی آگ نفس کی گرمی گھٹتے گھٹتے سرد نہ ہو

چاہ کی راہ دکھا کر تم تو وقف دریچہ و بام ہوئے

ان سے بہار و باغ کی باتیں کر کے جی کو دکھانا کیا

جن کو ایک زمانہ گزرا کنج قفس 

میں رام ہوئے

انشاؔ صاحب پو پھٹتی ہے تارے ڈوبے صبح ہوئی

بات تمہاری مان کے ہم تو شب بھر بے آرام ہوئے

Urdu In  English


Log Hilale Sham Se Bahr Kar Pal Main Mah Tamam Hoy 

Hum Har Barg Main Ghattey Ghattey Subha Talak Gumnam Hoy

Es Logun Ki Baat Karo Ju Eshq Main Khush Enjam Hoy 

Najad Main Keess Yahan Per Insha Khar Hoy Nakam Hoy 

Kis Ka Chamakta Chehra Layen Kis Suraj Se Mangey Dhoop

Ghoor Andheera Cha Jata Ha Khaloot e Dil Main Sham Hoy 

Eik Se Eik Janun Ka Mara Es Basti Main Rehta Ha

Eik Hume Hoshiyar The Yaru Aik Hamey Badnaam Hoy 

Shaok Ki Agg Nafas Ki Garmi Ghttey Ghattey Sard Na Ho 

Chah Ki Rah Dekha Kar Tum Tu Wakf Darecha O Bam Hoy 

En Se Bharu O Bagg Ki Batain Kar Ke Je Ko Dekhana Kia 

Jin Ko Aik Zamana Ghuzra Khanj Khafas 

Insha Sahab Po Phatti Ha Tare Dobe Subha Hoi 

Baat Tumhari Maan Ke Hum Tu Shab Bhar Be Aram Hoy

 

Credit:IBN E INSHA 

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker