Blog

Hum Mar Gaye Toh Sabko Dafnane Ki Fikar Hogi Urdu Hindi Poetry Lyrics

Hum Mar Gaye Toh Sabko Dafnane Ki Fikar Hogi

 kisi Ko Kabar Ki Tu Kisi Ko Le Jany Ki Fikar Hogi

Mera Naam Pukaro Ge Masjid Ke Minaro Main Aye Logo

 Mera Naam Pukaro Ge Masjid Ke Minaro Main Kahi Dair Na Ho Jaye Janaze Ki Fikar Hogi

 Pehle Rote Thy Mere Marne Ke Afsos Pe Hum Chale Gaye Toh Unko Khany Ki Fikar Hogi

Juhi Sham Hogi Pareshani Barh Jayegi kitne Mehman Agaye Sabko Sulane Ki Fikar Hogi

 Pheeke Chawal Banao Ge Ham Rakhs Kar Jaye Ge Pheeke Chawal Banao Ge Ham Rakhs Kar Jaye Ge

Sab Ko Baradari Main Izzat Banane Ki Fiqar Hogi

ہم مر گئے تو سب کو دفنانے کی فکر ہوگی۔

کسی کو قبر کی تو کسی کو لے جانے کی فکر ہوگی۔

میرا نام پکارو گے مسجد کے میناروں میں ائے لوگو۔

میرا نام پکارو گے مسجد کے میناروں میں ائے لوگو۔

کہیں دیر نا ہو جائے جنازہ کی فکر ہو گی۔

پہلے روتے تھے میرے مرنے کے افسوس پے۔

ہم چلے گئے تو ان کو کھانے کی فکر ہو گی۔

جو ہی شام ہو گی پریشانی بڑھ جائے گی کتنے مہمان آگۓ سب کو سلانے فکر ہو گی۔

 پھیکے چاول بناو گے ہم رکھس کر جاینگے۔

پھیکے چاول بناو گے ہم رکھس کر جاینگے۔

سب کو برادری میں عزت بنانے کی فکر ہوگی۔

DOWNLOAD THIS POETRY VIDEO ? CLICK BELOW DOWNLOAD LINK 👇🏻

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker